05th Dec2015
AAA

Jahannum mein Lay Janay Wali Majlisein

Views: 108

Jahannum mein Lay Janay Wali Majlisein

This book is an Urdu translation of Arabic book which mentions in detail a man’s speech, deeds and behavior while attending gatherings of his normal day life such as with his close relatives, loved ones, relatives and business partners. Which things are to be kept in mind when becoming a part of such gatherings, while at the same time preventing oneself from factors that could lead him to Jahannum, all this the noble author has presented in this beautiful book in the light of Qur’an and Sunnah.

عنوان:جہنم میں لے جانے والی مجلسیں
مصنف :شیخ عدنان طرشہ
مترجم: ابوالقاسم محمود احمد تبسم


مختصر بیان:انسان شروع سےہی اس دنیا میں تمدنی او رمجلسی زندگی گزارتا آیا ہے پیدا ہونے سے لے کر مرنے تک اسے زندگی میں ہر دم مختلف مجلسوں سے واسطہ پڑتا ہے خاندان ،برادری اور معاشرے کی یہ مجالس جہاں ا س کے اقبال میں بلندی ،عزت وشہرت میں اضافے او ر نیک نامی کا باغث بنتی ہیں وہیں اس کی بدنامی ،ذلت اور بے عزتی کاباعث بنتی ہیں انسان کو ان مجلسوں میں شریک ہو کر کیسا رویہ اختیار کرناچاہیے کہ جو اسے لوگوں کی نظروں میں ایسا وقار اور عزت وتکریم والا مقام بخش دے کہ لوگ اس کے مرنے کے بعد بھی اسے یاد رکھیں ۔ زیر نظر کتاب جوکہ ایک عربی کتاب کا ترجمہ ہے اس میں ایسی ہی باتوں او ر امور قبیحہ کی نشاندہی کی گئی ہے کہ جو روزمرہ کی یاروں ،دوستوں ، عزیزوں، رشتہ داروں ،کاروباری شراکت داروں وغیرہ کے ساتھ مل بیٹھ کر گفتگو کرنے کی مجلسوں میں سرانجام دئیے جاتے ہیں فاضل مصنف نے بہت ہی خوبصورت انداز میں آداب ِمجالس کو شرعی دلائل کے ساتھ پیش کیا ہے اس کتاب میں مذکور موضوعات اتنے عمدہ او رمفید ہیں کہ ہر مجلس ومحفل میں پیش کئے جانےکے قابل ہیں ہر مربی ومعلم ان کی روشنی میں اپنےزیر تربیت حلقہ کے افراد کی تربیت کرسکتاہے اللہ سےدعا ہے کہ قرآن وسنت کی روشنی میں غیر موزوں مجالس کی نشاندہی کرنےوالی اس مفید کتاب سےراہنمائی حاصل کرکے اہل اسلام کو اس پر عمل کرنے کی توفیق بخشے ۔گاپس علامہ البانی رحمہ اللہ نے اس سوال کا نہایت ہی مفصل اور واضح جواب ارشاد فرمایاجس کی افادیت کو پیش نظر رکھتے ہوئے قارئین کی خدمت میں یہ رسالہ پیش کیا جارہاہے ۔

Download Book Size: 4.1 MB | Downloaded 133 times