10th Jan2017
AAA

Takfeer | Reasons, Signs and Ruling

Views: 231

Takfeer | (Asbaab, Alamaat, aur Hukm) Reasons, Signs and Ruling

Author: Abu Saad Ihsan ul Haq Shahbaz

Moderate Fikr (ideology) and then its reflection on human’s life is a necessity. Moderation here does not mean compromising the religion of Al-Islam it is to adapt to the moderate behavior that guarantees a man’s success in this life and hereafter. Adapting to moderation bring benefits such as people neither hurt each other nor become a means of trouble for ideological anarchy in a society. However on the contrary, if this moderation in approach does not exist, then then the person or a group bring harm to the community wherever he lives. And this equilibrium in the society is disturbed highly when this person or group create a big issue out of an insignificant matter, or makes a permissible (Mubah) thing absolute Or complete Kufr. This person or the group then start(s) the journey of labeling everyone Kafir involving himself in Fasaad and Fitna.  He or his group is not even capable to sniff or smell knowledge yet he starts to act like an Allama. He then rides on the horse of issuing religious verdicts (Fatwa) and Dawah without knowledge. To add fuel to the fire, he or this deviated group get some followers who jumps up and down with his ignorant movements.

Alas ! Today this dis-balance is rampant among the spread of so called Islamic Knowledge and Dawah, and this dis-balanced ideology is being emphasized by such groups to the extent that Khawarijism is being nourished by leaps and bounds. Today, the Islamic world is faced with a big calamity where issues from Khawarijism to extreme internal disarray are rampant. Though there are many wounds inflicted to this Ummah however the biggest one to mention is the cancer of Khawarijism.

In this book, the author has presented splendid arguments on this ideological dis-balance and modern Khawarijism which is even worse than the ones who emerged in early Islamic history. May Allah accept the efforts of the noble author and guide our Ummah especially the youth in not falling into this trap.

عنوان: تکفیر، اسباب، علامات اور حکم
مصنف : ابو سعد احسان الحق شہباز


مختصر بیان: متوازن فکر اور معتدل سوچ اور پھر ان کے مطابق رویہ بنانا انسانی زندگی کی بہت بڑی ضرورت ہے۔ معتدل سوچ اور معتدل رویہ انسان کے لیے کامیابی کی دلیل ہوتی ہے اور ضمانت بھی۔ اس کا ایک فائدہ یہ ہوتا ہے کہ انساان بلاوجہ لوگوں کی دل آزاری اور فکری و ذہنی انتشار کا سبب نہیں بنتا ہے اور نئی الجھنیں اور پریشانیاں نہیں لاتا ہے۔ عدم توازان کی ایک نہایت سطحی شکل یہ ہے اور وہ بھی فساد عام کا نتیجہ ہے کہ انسان دین کے نام پر کسی معمولی سی بات کو اساسی اور اصولی مسئلہ بنا دے، یا ایک مباح شے کو عین اسلام یا عین کفر بتانا شروع کردے۔باہمی نزاعات کو عین دین بتانا شروع کردے، کفر سازی اور فتنہ سازی کو مہم جوئی بنا ڈالے۔ علم کی بو بھی سونگھنے کی صلاحیت نہ ہو لیکن علّامہ بننے کی کوشش کرے۔ دعوت و افتاء کا کاروبار کرنے لگے اور اس غیر ذمہ دارانہ عمل پر لوگ اچھلنا شروع کردیں۔بے اعتدالی کی یہ ساری شکلیں اس وقت علمی و دعوتی دائرے میں نظر آتی ہیں اور ان پر اتنا اصرار ہے کہ خارجیت شاداب ہورہی ہے اور اس کے علائم صاف نظر آرہے ہیں۔عالم اسلام ان دنوں بڑی ناگفتہ بہ صورت حال سے دوچار ہے ۔ قدم قدم پہ مسائل کا انبار اور خارجی سازشوں سے لے کر داخلی پریشانیوں کا نہ ختم ہونے والا سلسلہ دراز ہوتا جاتا ہے ۔ یوں تو بہت سارے زخم ہیں جو رس رہے ہيں لیکن بطور خاص عالم اسلام کو خارجی فکرو نظر کے سرطان نے جکڑ لیا ہے ۔ ہرچہار جانب تکفیر و تفریق اور بغاوت کی مسموم ہوائیں چل رہی ہیں اور سارا تانا بانا بکھرتا ہوا محسوس ہورہا ہے ۔ امت کے جسم کا ایک ایک عضو معطل، اجتماعیت اور وحدت کی دیواروں کی ایک ایک اینٹ ہلی ہوئی سی ہے اور ایسا لگتا ہے جیسے اب تب امت کے شاندار عمارت کی کہنہ دیوار پاش پاش ہو جائےگی۔زیر تبصرہ کتاب “تکفیر اسباب، علامات اور حکم ” محترم ابو سعد احسان الحق شہباز صاحب کی تصنیف ہے جس میں انہوں نے اسی فکری عدم توازن اور خارجیت جدیدہ پر شاندار بحث کی ہے۔اللہ تعالی سے دعا ہے کہ وہ مولف کی اس کوشش کو اپنی بارگاہ میں قبول فرمائے اور ان کے میزان حسنات میں اضافہ فرمائے۔آمین

Download Book Size: 1.2 MB | Downloaded 114 times